Barn bygger med tidningspapper

خاص تعلیمی تعاون

آموزشی ماحول سبھی طلبہ کے لیے دستیاب ہونا ضروری ہے۔ تاکہ تعاون کے ضرورتمند بچوں، نوعمر افراد اور بالغان کو اس ہمقدر تعلیم تک رسائی ہو سکے جس کی دستیابی کے بارے میں انہيں جانکاری درکار ہوتی ہے۔

مثال کے طور پر اس کا مطلب یہ ہو سکتا ہے کہ اسکول سبھی طلبہ کو ان کی اپنی شرائط پر پڑھنے، لکھنے اور جمع کا کام کرنے کے امکانات پیش کرتا ہے۔ معلمین کے پاس اس بارے میں حکمت عملیاں موجود ہیں کہ آموزش اور آموزشی مواد کو کس طرح سے ہم آہنگ بنایا جا سکتا ہے۔ اور یہ اسکولی تنظیم میں شرکت، برتاؤ، متبادل ٹولز، طبعی دستیابی اور موافق بنائی ہوئی جسمانی سرگرمیوں کے بارے میں بھی جانکاری ہے۔

ہم باہمی تعاون کرنے والے والدین ہیں

پری اسکولز، اسکولز اور تعلیم بالغان کے ادارے خاص تعلیمی مسائل پر مشورہ لینے کے لیے ہم سے رجوع کر سکتے ہیں۔ ہم بلدیوں اور خود مختار پری اسکولوں اور اسکولوں کے ساتھ باہمی تعان کرکے اپنی لیاقتوں کی مدد سے تعاون کرتے ہیں۔ یہ کام ہمارے پانچ علاقائی اعمال کے ذریعہ انجام دیا جاتا ہے۔ بیشتر معاملوں میں یہ اسکول میں ذمہ داریوں کا حامل کوئی شخص ہوتا ہے یا کوئی ٹیم ہوتی ہے جو ہمارے خاص تعلیمی مشیر سے رابطہ کرتی ہے۔ یہ مسائل تعلیمی حکمت عملیوں اور طریقوں، معذوری کے تعلیمی عواقب کے بارے میں یا ارتقاء پذیر لیاقتوں کے بارے میں ہو سکتے ہیں۔ دیگر معاملوں میں ایسا ہو سکتا ہے کہ ہم طویل مدتی خاص تعلیمی تعاون حاصل کرنے کی خاطر کسی بلدیہ یا اسکول کی ضرورت کے بارے میں گفتگو کرنے کے لیے میٹنگ کے واسطے پیشقدمی کریں۔

ہم مفت تربیتیں بھی پیش کرتے ہیں۔ ہمارے کورسز، فاصلاتی آموزش، کانفرنسوں، سیمیناروں اور ویب سیمیناروں کے لیے اہم اہدافی گروپس معلمین اور اسکول کے قائدین ہوتے ہیں۔ خاص تعلیمی مسائل پر مشورے کے ذریعہ ہم جو تعاون پیش کرتے ہیں اس میں سبھی قسموں کے اسکول شامل ہیں جیسا کہ تعلیمی ایکٹ کے باب ‎1 § 1‎ میں مذکور ہے۔

خاص تعلیمی تحقیق میں اضافی تعاون

ہمارے قومی وسائلی مرکز میں ہم خاص تعلیمی سروے انجام دیتے اور حساب کتاب کرتے ہیں۔ یہ کام پری اسکولوں اور اسکولوں کے معلمین کے باہمی تعاون سے مختلف لیاقتوں کی حامل ایک ٹیم یا بچوں یا طلبہ سے نمٹنے میں اہمیت رکھنے والے افراد کے ذریعہ انجام دیا جاتا ہے۔ وسائلی مرکز والدین کے لیے بھی کورسز پیش کرتا ہے۔

وسائلی مرکز کو درج ذیل میں مبتلا بچے اور طلبہ ملتے ہیں:

• بینائی سے محرومی، مزید معذوریوں کے ساتھ یا بغیر
• شدید لسانی عارضہ
• سماعت کی معذوری اور اس کے ساتھ التواء اور/یا خود پسندی اور
• خلقی/شروعاتی بہرا اندھاپن۔

Publicerat onsdag 4 januari 2017 Granskat onsdag 11 januari 2017